ماسٹر کی آہ

ماسٹر کی آہ
 شاگرد ہماری عزت کیوں نہیں کرتے ؟  آہ ۔۔۔۔ تنخواہ ۔۔۔ خرچہ نہیں چلتا ۔۔۔ کنبہ نہیں پلتا ۔۔۔ ہائے بڑھاپا ۔۔۔ یا اللہ کچھ ٹیوشنز دیدے ۔۔۔۔ وہ بیچارہ لوگوں‌کے گھر گھر جاکر بچوں کو پڑھاتا ہے اور رات دس بجے گھر آتا ہے ایک سرد آہ کھینچتا ہے اور صوفے پر گرتے ہوئے ایک ہی جملہ ۔۔۔ بیگم کھانا لائو۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s