تيمم کب کياجائے؟

تيمم کب کياجائے؟
جسے وضو يا غسل کي حاجت ہو مگر اسے پاني استعمال کرنے پر قدرت نہ ہو اسے تيمم کرنا چاہيے اس کي چند اہم صورتيں درج ہيں۔
چاروں طرف ايک ايک ميل تک پاني کا پتہ نہ ہو،
يا ايسي بيماري ہو کہ پاني کے باعث شديد بيمار ہونے يا دير ميں اچھا ہونے کا صحيح انديشہ ہو خواہ يہ اس نے خود آزمايا ہو يا کسي مستند اور غير فاسق طبيب نے بتايا ہو، يا اتني سخت سردي ہو کہ نہانے سے مرجانے يا بيمار ہوجانے کا قوي انديشہ ہو اور لحاف وغيرہ کوئي ايسي چيز اسکے پاس نہ ہو جس سے نہانے کے بعد سردي سے بچ سکے،
يا ٹرين يا بس سے اتر کر پاني استعمال کرنے ميں گاڑي چھوٹ جانے کا خدشہ ہو ، يا وضو ، غسل کرنے کي صورت ميں نماز عيدين نکل جانے کا گمان ہو۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s