توحیدی فرقے کے عقائد و نظریات

توحیدی فرقے کے عقائد و نظریات
اللہ تعالیٰ کی توحید کے ماننے کا دعوٰی کر کے تو حیدی فرقہ جو کئی رنگ میں ہے ایک رنگ اپنے آپکو ”حزب اللہ “بھی کہتا ہے جو کیماڑی کراچی کی طرف ہے ایک رنگ اپنے آپکو توحیدی کہتا ہے
توحیدیوں کے عقائد و نظریات ::
عقیدہ :رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم ،انبیاءکرام علیہم السلام خلفائے راشدین اور اولیاءکا ملین کی شان میں بکواس کرنے اور ان کو نیچا دکھانے سے توحید مضبوط ہوتی ہے ۔
عقیدہ :اللہ تعالیٰ کے سوا خواہ وہ نبی ہو یا ولی جن ہو یا فرشتہ کسی اور میں نفع،نقصان ،بھلائی و برائی پہنچانے کی قدرت ازخود یا خدا کی عطا سے جاننا اور ماننا شرک ہے ۔(درس توحید ص 16)
عقیدہ :اگر کوئی یہ سمجھے کہ نبی ولی ،پیر ،شہید ،غوث ،قطب کو بھی عالم میں تصرّف کرنے کی قدرت از خود ہے یا اللہ کی طرف سے عطائی ہے وہ شخص از روئے قرآن وحدیث مشرک ہوجاتا ہے ۔(درس توحید، ص7)
عقیدہ :آپ صلی اللہ علیہ وسلم کا گھر سے بے گھر ہونا وطن سے بے وطن ہونا اور دندانِ مبارک شہید ہونا ، پیشانی مبارک زخمی ہونا ،جسم اطہر کا سنگ باری سے لہو لہان ہونا،ساحر ،کاہن ،کاذب،صابی ، مجنون وغیرہ کا لقب پانا ،کفّار کا سب و شتم ،لعن طعن سے پیش آنا ،پیٹ پر پتھر باندھنا اس بات کی دلیل ہے کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم کو کوئی قدرت نہ تھی (یعنی ہے بس و عاجز تھے )(معاذاللہ )۔(درس توحید )
عقیدہ :بتوں پر نازل ہونے والی آیتوں کو اولیاءاللہ کی ذات پر چسپا کرنا ۔
عقیدہ :صحابہ کرام علیہم الرضوان اور اہلبیت اطہار کی شان میں طعنہ زنی کرنا ۔
عقیدہ :سادہ لوح مسلمانوں پر مشرک و بدعتی کے فتوے لگانا ۔
عقیدہ :مزارات اولیاءکے خلاف کتا بچے اور پمفلٹ تقسیم کرنا ۔
توحید یوں کی یہ توحید ابلیسی توحید ہے ،ابو جہلی توحید ہے ،ابو لہبی توحید ہے ،عبداللہ ابن ابی (رئیس المفا فقین )والی توحید ہے صرف اللہ تعالیٰ کو ماننا اور رسالت کا تصوّر درمیان سے ہٹا دینا کفر ہے اور سراسر گمراہی ہے کفّار عرب بھی خدا تعالیٰ اور اس کی صفات کو عملی طورپر مانتے تھے لیکن سرکارِ اعظم صلی اللہ علیہ وسلم کی ذات اور کمالات کو دل سے نہ مانا تو جہنم کے نچلے اور سخت ترین طبقے میں گرے ۔
حقیقی توحید یہ ہے کہ اللہ تعالیٰ کومعبود اور سر کار اعظم صلی اللہ علیہ وسلم کو اس کا نائب تسلیم کیا جائے ۔
لطیفہ :توحید ی بد نظر کو مانتے ہیں بلکہ اس موضوع پر ان کی طویل تصانیف ہیں حال ہی میں ایک کتاب ”النظر حق “نجد یوں نے شائع کی ہے جس میں دلائل و شواہد سے بد نظر کا اثبات کیا ہے لیکن انہیں کہا جائے کہ انبیاءو اولیاءکی نگاہِ کرم سے ہزاروں بلکہ بے شمار لوگوں کی بگڑی بن گئی تو ان نام نہاد توحیدیوں کو شرک یاد آجاتا ہے گویا یہ شر کے قائل ہیں خیر کے قائل نہیں ،ہیں حالانکہ جہاں نظر شر حق ہے تو نظر خیر کا حق ہونا بطریق اولیٰ حق ہے
۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s