نظر بد اور تعویذ ( سائنسی نقطہ نظر کے حوالے سے)

قال رسول اللہ صلی اللہ تعالٰی علیہ وآلہ وسلم ،، لا رقیۃ الا من عین اوحمۃ ( مشکواۃ شریف صفحہ 390 لائن نمبر 14 ،، ابن ماجہ صفحہ 259 لائن نمبر 14 )
منتر ، تعویذ کی اجازت نہیں مگر نظر بد یا بچھو کے کانٹے پر

تعویذ کرنا !
عربی زبان کے اندر جھاڑ پھونک تعویذ ، منتر کرنے کو رقی ۃ کہتے ہیں حضور صلی اللہ تعالٰی علیہ وآلہ وسلم نے خود دم کرنے کی اجازت دی ہے مشکواۃ شریف صفحہ 388 لائن نمبر 2 ، ابن ماجہ شریف صفحہ 259 لائن 20 پر حدیث مبارکہ ہے ۔
رخص فی الر قیۃ من الحمۃ والعین والنملۃ
حضور صلی اللہ تعالٰی علیہ وآلہ وسلم نے اجازت دی دم کرنے کی ، تعویذ کرنے کی بچھو کاٹ لے ، نظر لگ جائے ، پہلو کے زخم ( پھینسیوں وغیرہ ) میں ۔
یہ بات تو ثابت ہے پھونک میں اثر ہوتا ہے یہاں رقیۃ کے دوسرے معنٰٰی تعویذ پر تھوڑی سے گفتگو کرنا ہے !
پادری لیڈر بیٹر فرماتے ہیں A Talisman or an amulet strongly charged with magnetism for a particular purpose. some one who possesses strong magnetic power may be for anvaluable help
ایک تعویذ یا منتر میں کوئی زبردست مقناطیسی شخصیت کسی خاص مقصد کے لئے مقناطیسی طاقت بھر دے بہت مفید ثابت ہوتا ہے ۔
آپ نے دیکھا ہو گا تعویذ لکھتے ہوئے کہ اس کے اندر ھندسے ہوتے ہیں ، وہ لکھ کر مریض کو دئیے جاتے ہیں جاؤ۔ یہ باندھ دینا یا لٹکا لینا ۔
حقیقت میں یہ مخصوص نمبرز ہیں جنکے لکھنے سے متعلقہ موکل فوراً پہنچ جاتے ہیں اور اللہ کی رضا سے وہاں سے مصیبت کو ہٹا دیتے ہیں جو انسان کو نظر نہیں آ رہی ہوتی ۔
وہی سسٹم ہو جو وائرلیس میں ہوتا ہے ۔ آپ مخصوص نمبر ملاتے ہیں فوراً متعلقہ بندے سے بات ہو جاتی ہے اسی طرح تعویذ کے اندر مخصوص بات کے لئے مخصوص نمبر ہوتے ہیں جو جہاں ہوتے ہیں وہ موکل ادھر پہنچ جاتے ہیں اور کام شروع کر دیتے ہیں ۔
یہ بات یاد رہے یہ موکل لکھنے والے کے قبضے میں ہوتے ہیں ، یہی وجہ ہے کہ ہر ایک کا لکھا ہوا تعویذ کام نہیں کرتا ۔
الفاظ اپنا اثر رکھتے ہیں ۔ پیرا سائیکا لوجی ( para psychology) کے ایک ماہر پروفیسر پیرل ماسٹر کے مطابق نام زندگی پر اس حد تک اثر انداز ہوتے ہیں کہ الفاظ کا ترجمہ انسانی شخصیت کے نکھار یا بگاڑ کو ظاہر کرتا ہے ۔ انہوں نے لفظ رحیم اور پرویز کا موازنہ کیا تو لفظ رحیم سے سبز اور سفید روشنی نکلتی ہوئی محسوس ہوئی ۔ جبکہ لفظ پرویز میں سے black اور dark brown روشنی نکلتی ہوئی محسوس ہوئی ۔
یہ روشنی بدن سے نکلتی ہے ، ماہرین روحانیت spiritualists کے ہاں ہر حرف کا ایک خاص رنگ اور اس میں ایک خاص طاقت ہوتی ہے ، غیب بینوں ( Clairvoyants) نے حروف کو لکھ کر تیسری آنکھ سے دیکھا تو انہیں الف کا رنگ سرخ، ب کا نیلا ، د کا سبز اور س کا زرد نظر آیا ۔
پھر انکے اثرات کا جائزہ لیا تو بعض الفاظ کے پڑھنے سے بیماریاں جاتی رہیں الفاظ طاقت کا خزانہ ہیں حضرت عیسٰی علیہ السلام فرماتے ہیں !
My words are life to those that find them and health to all their flesh
میرے الفاظ میرے ماننے والوں کے لئے زندگی اور انکے اجسام کے لئے صحت ہیں ۔
اللہ پاک نے بھی تو ایک لفظ ہی کہا تھا ۔
By the Word of Lord were the heavens made
اللہ کے ایک لفظ سے آسمان پیدا ہوئے ۔
الہامی الفاظ Highly Energized ہوتے ہیں ۔
The master and the path کے مصنف لیڈ بیٹر فرماتے ہیں ۔
Each word as it is uttered makes a little form in etheric matter
ہر لفظ ایتھر میں ایک خاص شکل اختیار کر لیتا ہے ۔
Astrologist ڈاکٹر لیول پاؤل کہتے ہیں ۔
مسلمانوں کی الہامی کتاب الفاظ کا مجموعہ نہیں بلکہ ایک خاص انرجی کا پیٹرن ہے اس کی طاقت نہ صرف پڑھنے والے میں منتقل ہوتی ہے بلکہ قریب بیٹھنے والوں کو بھی گھیر لیتی ہے ۔
[size=36]نظر بد ![/size]
ہماری گفتگو دو الفاط پر تھی ۔ تعویذ اور نظر بد لگنا
ہم اکثر استعمال کرتے ہیں کہ فلاں بچے کو نظر لگ گئی ۔
حضور اکرم صلی اللہ تعالٰی علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا ۔
العین حق ( ابن ماجہ صفحہ 258 )
واقعی نظر لگتی ہے ۔
وعن عائشہ قالت امر النبی صلی اللہ تعالٰی علیہ وسلم ان یسترقی من العین ۔ ( بخاری ۔ مسلم ۔ مشکواۃ شریف صفحہ 388 ، لائن نمبر 3 )
حضرت عائشہ روایت کرتی ہیں کہ نبی کریم صلی اللہ تعالٰی علیہ وآلہ وسلم نے حکم فرمایا کہ ھم نظر بد کے لئے تعویذ کروائیں ۔
مخفی علوم میں سے ایک علم Parapsychology کے نام سے سامنے آتا ہے ۔
اس علم کے ماہرین فرماتے ہیں کہ ہر انسان کی آنکھ سے کچھ غیر مری شعاعیں ھمہ وقت نکلتی رہتی ہیں ان کی نوعیت مثبت اور منفی دونوں ہو سکتی ہیں یہ شعاعیں جلد میں موجود مسامات کے ذریعے انسانی جسم میں جذب ہو جاتی ہیں ۔
منفی شعاع ہو گی تو جسم کو نقصان پہنچائے گی ، مثبت ہو گی تو تعمیر جسم کا باعث بنے گی ۔
ڈاکٹر کر نگٹن کہتے ہیں کہ انسانی باڈی سے مثبت اور منفی لہروں کا خروج ہوتا ہے وہ اس لہر کو Aura کا نام دیتے ہیں اور فرماتے ہیں ۔
Aura Is an invisible magnetic radiation from the human body whch either attracts or repels.
ترجمہ ۔ اورا وہ غیر مری مقناطیسی روشنی ہے جو انسانی جسم سے خارج ہوتی ہے یہ یا تو دوسروں کو اپنی طرف کھینچتی ہے یا پرے دھکیلتی ہے ۔
منفی سوچ و کردار والے آدمی کی شعاعیں دوسرے جسم کو نقصان پہنچاتی ہیں ڈاکٹر نکلسن ڈیویز جو علم روحانیت میں ایک مستند حیثیت رکھتے ہیں وہ فرماتے ہیں نگاہیں جہاں جہاں پڑتی ہیں وہیں جمتی ہیں پھر ان کا اچھا یا برا اثر اعصاب دماغ اور ہارمونز پر پڑتا ہے ۔
نظر میں کتنا اثر ہوتا ہے اس کی ایک ایک مثال سنتے پڑھتے جائیں آپ کو یقین ہو جائے کہ نظر بڑا اثر رکھتی ہے ۔
ترقی کے ڈاکٹر ھلوک نور باقی Radiobiology Specialist ہیں اپنے موضوع
The situation of those in the heavens and on the earth at the resurrection
میں فرماتے ہیں کہ ایک خاص قسم کے کچھوے ہیں جو انڈے دینے کے بعد اکیّس دن ان کو گھورتے ہیں ان کی آنکھوں سے ایسی شعاعیں نکلتی ہیں جو انڈوں کو پکاتی ہیں اور بچے پیدا ہوتے ہیں ۔
کچھوے کی آنکھ میں اثر ہو سکتا ہے تو انسان کی آنکھ میں اثر نہیں ہو سکتا؟
ڈاکٹر الیگز ینڈر کانن ( Dr Alexander Canon ) اپنی کتاب The invisible Influence کے صفحہ 51، 52، پر فرماتے ہیں ۔
ناگ اپنے شکار پر اچانک حملہ نہیں کرتا بلکہ اس کے قریب آکر اس کی آنکھوں میں آنکھیں گاڑتا ہے ۔ پھر سر کو اس انداز سے ھلاتا ہے کہ شکار ہپنا ٹائزڈ ہو کر رہ جاتا ہے ۔
یعنی سانپ کی آنکھوں سے ایسی شعاعوں کا خروج ہوتا ہے کہ شکار ایک دم جام ہو جاتا ہے ۔
ہر چیز سے لہریں نکلتی ہیں اسی طرح بندے سے بھی مقناطیسی لہروں کا خروج ہوتا ہے ۔
Like the earth man also has magnetic vibrations which produce different impressions in different cases.
ڈاکٹر الیگزینڈر فرماتے ہیں کہ
زمین کی طرح انسان کی ھستی بھی مقناطیسی لہریں خارج کرتی ہے جن کا اثر مختلف حالات میں مختلف ہوتا ہے ۔
اگر لہریں نیک آدمی سے نکلیں جس کے خیالات و اعمال پاک ہوں تو وہ دوسروں میں محبت پیدا کریں گے ۔
خلاصہ !
میرا اتنے سارے دلائل دینے کا مقصد صرف یہ تھا کہ آپ جان جائیں ہر شے سے لہریں یا شعاعیں نکلتی ہیں اور وہ بھی اثر رکھتی ہیں اسی طرح آدمی بھی کسی چیز کو دیکھے تو دوسرے جسم پر اثر ہوتا ہے برے آدمی کی نظر بد سے بچنے کے لئے حضور اکرم صلی اللہ تعالٰی علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا ۔ تم تعویذ کرواؤ ۔
آج1414 سال بعد تحقیق ہوئی ہمارے نبی اکرم صلی اللہ تعالٰی علیہ وآلہ وسلم نے اتنی ساری تحقیق کو دو لفظوں میں بند کردیا ۔
نظر لگتی ہے بچنے کے لئے تعویذ کرواؤ ۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s